ابوالقاسم عبدالعظيم بن عبدالله بن علي بن الحسن بن زيد بن السبط الاكبر الامام ابي محمد الحسن المجتبي عليه‌الصلوة و السلام یكي از اعاظم ذرّيه‌ی رسول و فرزندان مرتضي و بتول صلوات الله عليهم‌ اجمعين و از شخصيت‎ها و معاريف علماي اهل‎بيت و...
جمعه: 1397/09/23 - (الجمعة:6/ربيع الثاني/1440)

۸ ربيع الثاني سن ۲۳۲ ہجري امام علي نقي عليہ السلام كے گھر ميں گيارہويں امام حضرت امام حسن عسكري عليہ السلام كي ولادت ہوئي ، آپ كي والدہ ايك با تقويٰ خاتون تھيں جن كا نام حديث يا سليل لكھا گيا ہے ۔ (بحارالانوار ، ج/ ۵۰، ص/ ۲۳۶) ولادت كے بعد سن ۲۴۳ ہجري تك آپ مدينہ ميں رہے اس كے بعد اپنے والد بزرگوار كے ساتھ عباسي دارالحكومۃ شہر " سُرّ من راي" چلے گئے اور وہاں اپنے والد كے ہمراہ عسكر نامي علاقہ...
ابوالقاسم عبدالعظيم بن عبدالله بن علي بن الحسن بن زيد بن السبط الاكبر الامام ابي محمد الحسن المجتبي عليه‌الصلوة و السلام؛ رسول اعظم صلی اللہ علیہ و آلہ وسلم کی عظیم ذریت اور علی و بتول صلوات اللہ علیہم اجمعین کے فرزندوں میں سے ایک ہیں۔ آپ علماء علوم اہلبیت علیہم السلام کی معروف شخصیات، حضرت امام محمد تقی علیہ السلام اور حضرت امام علی نقی علیہ السلام کے بزرگ صحابہ اور اسرار ائمہ اطہار علیہم...
سوال : اگر فدك كے مسئلے ميں مخالفين يہ اعتراض كريں كہ " عدالتي قوانين كے لحاظ سے حضرت صديقہ طاہرہ عليھا السلام كا دعويٰ ثابت نہيں ہو سكا ، جس طرح اميرالمومنين عليہ السلام قاضي كے سامنے اپني زرہ كے لئے كوئي دليل قائم نہ كر سكے اور مولائے كائنات كے گماشتہ قاضي نے ان كي عصمت كي پروا كئے بغير ان كے خلاف فيصلہ ديا ، تو اس كا كيا جواب ديا جا سكتا ہے ۔ جواب : فدك كے غصب كے سلسلے ميں ابوبكر اور اس كے...
مقابلے ميں زمانہ جاہليت كي غلط رسم و رواج كو زندہ كرنا تھا ۔ امام حسين عليہ السلام نے جب ان حالات كا مشاہدہ كيا تو قيام كيا تاكہ پيغمبر(ص) كي سنت كو زندہ كريں اور اپنے نوراني بيان ميں قيام كے اس مقصد كي جانب اشارہ بھي فرمايا : اني لم اخرج اشراً ولا بطراً ولا مفسداً و لا ظالماً ۔۔۔(۱) ميں فساد پھيلانے كے لئے نہيں نكلا ہوں بلكہ اپنے جد كي امت كي اصلاح كے لئے نكلا ہوں ۔۔۔۔ ميرا ارادہ ہے كہ ميں اپنے...
(مرحوم حضرت آيت ‌اللّه آخوند ملا محمد جواد صافی گلپايگانی ‌(قدس سره) کے بیانات سے اقتباس) پہلی مصيبت جب ابو الفضل العباس علیہ السلام کے دونوں بازو قلم ہو گئے اور آپ کی آنکھ میں تیر پیوست ہو گیا ، اور آپ کا بدن مطہر تیروں ، تلواروں اور نیزوں کے زخموں سے اس طرح چھلنی ہو چکا تھا کہ جس طرح شہد کی مکھیوں کا چھتہ ہو ۔ آپ بچوں کے لئے جو پانی لا رہے تھے وہ زمین پر بہہ گیا : آيِساً مِنَ...
    اسلام کی ترقی میں مجالس حسین علیہ السلام  کا معجزاتی کردار محرم الحرام کی مناسبت سے حضرت آیت الله العظمی صافی گلپایگانی کے سلسلہ وار نوشتہ جات (5)     سید الشہداء حضرت امام حسین علیہ السلام کی شہادت کے نتائج میں سے ایک عزاداری و سوگواری اور آپ کے ذکرمصائب ہے جو سال بھر بیان کیاجاتا ہے اور جس میں سماج کی تعلیم و تربیت اور ہدایت و اخلاق کا سامان...
مبلغین کی عاشورائی رسالت ماہ محرم میں تبلیغ کی اہمیت مرحوم آیت اللہ العظمی حائزی یزدی (قدس سرہ) کی کاوشوں سے سنہ ۱۳۴۰ ہجری میں قم کے قدیمی حوزۂ علمیہ کی تجدید عمل میں لائی گئی ۔ اس حوزۂ علمیہ میں درسی سرگرمیوں کے ساتھ  ساتھ علمی و تحقیقی سرگرمیوں کو بھی فروغ دیا جاتا ہے کہ جس میں بزرگ اساتید ، علماء ، آیات عظام ، مؤلفین ، خطباء ، واعظین اور برجستہ مبلغین شہروں ، دیہاتوں اور ہر...
عید مباہلہ کی مناسبت سے خصوصی تحریر ( فَمَنْ حاجَّكَ فيهِ مِنْ بَعْدِ ما جاءَكَ مِنَ الْعِلْمِ فَقُلْ تَعالَوْ انَدْعُ اَبْناءَنا وَ اَبْناءَكُمْ وَ نِساءَنا وَ نِساءَكُمْ وَ اَنْفُسَنا وَ اَنْفُسَكُمْ ثُمَّ نَبْتَهِلْ فَنَجْعَلْ لَعْنَتَ اللّه عَلَي الْكاذِبينَ ) پیغمبر اکرم صلی اللہ علیہ و آلہ و سلم کے اپنی رسالت پر قوّت ایمان کے دلائل و مظاہر میں سے ایک ’’ واقعہ مباہلہ ‘‘ ہے ۔ کیونکہ...
مكتب غدیر ( در حقیقت ) مكتب جہاد ، مكتب ایمان ، مكتب قرآن اور تمام انبیاء کے استمرار کا مکتب ہے ۔ غدیر ایک ایسی راہ ہے کہ جس سے صرف حقیقت کی طرف گامزن افراد ہی گذرتے ہیں۔ خوف و خطر اور تاریکی و ضلالت کی وادی میں گمشدہ افراد کو چاہئے کہ وہ خود کو اس مقصد اور منزل تک پہنچائیں۔   ہرگز منقطع نہ ہونے والا نظام غدیر میں جلوہ گر ہونے والا عام نظام ایک ایسا نظام ہے کہ جو ہمیشہ سے...
غدیر؛حضرت امیر المؤمنین علی علیہ السلام کی خلافت بلا فصل اور ولایت کی سب سے معتبر اور صریح نص ہے۔ غدیر کی نصوص کے علاوہ اس عظیم ولایت پر بہت  زیادہ صریح نصوص ہیں کہ جو کتاب و سنت میں موجود ہیں ۔ اگرچہ یہ نصوص بے شمار ہیں لیکن ان سب نصوص کو دو حصوں میں تقسیم کیا جا سکتا ہے:نصّ جلی اور نصّ خفی  نصوص جلیّہ قرآن کی نصوص جلیّہ ، جیسے مباہلہ کی آيه ٔكريمه (1)یہ آیت مبارکہ: إِنَّمَا...
اس عظیم شخصیت کے بارے میں کیا کہہ سکتے ہیں ؛ جو ذات رسول خدا صلی اللہ علیہ و آلہ وسلّم کے بعد کلمات الٰہیہ میں اشرف، آیات ربّانیہ میں اکبر، دلائل جامعہ میں سب سے محکم دلیل، براہین ساطعہ میں اتمّ برہان، وسائل کافیہ، مظہر العجائب، معدن الغرائب اور تمام برتر انسانی عظمتوں کی مالک ہو۔ جو خدا کا برحق خلیفہ ہو اور جن کی محبت مؤمن کے صحیفہ کا عنوان  اور ولادت میں طہارت کی علامت ہو۔ اگر انسان کے...
اميرالمؤمنين علي عليه السلام، بے شمار عظمتوں کے سالار ہیں۔علي عليه السلام وہی ذات ہے كه جس کے فضائل اور عظمتوں کے بارے میں پيغمبر اسلام نے فرمایا: إِنَّ اللهَ تَبَارَكَ وَ تَعَالَى جَعَلَ لِأَخِي عَلِيِّ بْنِ أَبِي‌طَالِبٍ فَضَائِلَ لَا يُحْصِي عَدَدَهَا غَيْرُه‏(۱) یعنی خداوند متعال نے میرے بھائی علي بن ابي‌طالب کے لئے ایسے فضائل قرار دیئے ہیں کہ خدا کے علاوہ کوئی ان کو شمار نہیں کر سکتا...
عرفہ کا دن عبادت اور خدا پرستی کا دن ہے۔ ایک ایسا دن کہ جس میں انسان خود کو دوسرے تمام ایّام کی بنسبت خدا کی رحمت سے زیادہ قریب پاتاہے۔   دعائے عرفه، نور ہے :  اس دن انسان جو بھی دعائیں پڑھتا ہے وہ سب اسے عروج تک پہنچاتی ہیں، نیز فکر اور روح کو کمال عطا کرتی ہیں ۔  بالخصوص حضرت امام حسین علیہ السلام کی دعائے عرفہ کہ جس کے معارف اور اعلٰی مطالب کو بیان نہیں کر سکتے ۔...
باغ رسالت كے اس گلزار كي عمر اگر چہ مختصر تھي ليكن اس كي رنگ و بو سارا جہان معطر گيا ۔ امام تقي عليہ السلام سے جو احاديث مروي ہيں اور جن علمي مسائل كا آپ نے جواب ديا يا جو كلمات آپ كي زبان مبارك سے ادا ہوئے اور ہم تك پہنچے ہيں وہ رہتي دنيا تك تاريخ اسلام كے صفحات كي زينت بنے رہيں گے ۔ آپ كي كل عمر صرف پچيس برس تھي جس ميں سترہ سال آپ كي امامت كے ہيں ۔ معتصم عباسي نے آپ كو مدينہ منورہ سے...
آپ كا اسم گرامي علي كنيت ابو الحسن اور مشہور لقب رضا ہے۔ آپ سلسلہ امامت كي آٹھويں كڑي اور دسويں معصوم ہيں ۔ آپ كي ولادت مشہور قول كي بنياد پر ۱۱ ذيقعدہ سن ۱۴۸ ہجري كو ہے جبكہ بعض لوگوں نے ماہ ذي الحجہ يا ربيع الاول بھي لكھا ہے اور بعض مورخين نے آپ كا ولادت سن ۱۵۳ ہجري لكھا ہے ۔  چونكہ مولائے كائنات (ع) كا لقب بھي ابوالحسن تھا اس لئے آپ كو ابوالحسن ثاني كہتے ہيں اور آپ كا لقب رضا اس...
علامہ مجلسي فرماتے ہيں : روايات كي بعض كتابوں ميں ملتا ہے كہ علي بن ابراھيم اپنے والد سعد سے نقل كرتے ہيں كہ امام رضا عليہ السلام نے فرمايا : يا سعد عندكم لنا قبر ؛ تمہارے يہاں ہم ميں سے ايك قبر ہے ، ميں نے كہا : ميں آپ پر قربان ، كيا آپ كي مراد جناب فاطمہ بنت موسي كاظم عليھما السلام كي قبر ہے ؟ فرمايا : نعم من زارھا عارفاً بحقھا فلہ الجنۃ ، ہاں! جو بھي ان كي زيارت ان كے حق كي معرفت كے ساتھ كرے...
بسم الله الرحمن الرحيم قال الله تعالي: ﴿يَا أَيهَا الَّذِينَ آمَنُوا اتَّقُوا اللّٰهَ وَكُونُوا مَعَ الصَّادِقِينَ﴾ حضرت صادق، امام راستین پیشوا و مقتدای اهل دین کرد احیا، شرع جدش مصطفی داد رونق، رسم و آئین ولا مکتب فقه و فضیلت باز کرد دعوت مردم ز نو آغاز کرد حضرت امام جعفر صادق علیہ السلام اپنی بہت ہی باعظمت علمی اور جامع الأطراف شخصیت سے تمام عالم السلام پر حق رکھتے ہیں ۔ آپ نے...
  بسم  اللہ  الرحمن  الرحیم  قال اللہ تعاليٰ : وَ ذَكِّرهُم بِأيّام اللهِ   بقيع مدينہ منورہ كي زمين كا ايك حصہ ہے جو اپنے دامن ميں صدر اسلام كے بہت اہم وقائع كو سميٹے ہوئے ہے ، ان چودہ صدیوں کے دوران  يہ سر زمين ہمیشہ سے ہميں صدر اسلام كے وقائع كي ياد دلاتي رہتي ہے ۔ اس سرزمين پر موجود اسلامي آثار كي حفاظت اسلامي تبليغ اور قرآن كريم كي حمايت كے مترادف...
اَسْئَلُكَ بِحَقِّ هذَا الْيَومِ الَّذِي جَعَلتَهُ لِلْمُسْلِمِينَ عِيداً عيد سعيد فطر كے دن ساري دنيا كے مسلمان خوشي و مسرت ميں غرق رہتے ہيں اور اس بات پر فخر محسوس كرتے ہيں كہ انھوں نے ماہ مبارك رمضان كو خدا كي طاعت و عبادت ميں بسر كيا اور اس كي رحمتوں اور بركتوں سے فيض حاصل كيا ۔  خدا كا شكر ادا كرتے ہيں كہ اسلام كے ايك عظيم تربيتي درس كو ايك مہينہ ميں تمام كيا ہے ۔ اور اس ميں جو سبق...
عيد الفطر اسلامي كي دو عظيم عيدوں ميں سے ايك ہے جس كے بارے ميں بے شمار احاديث وارد ہوئي ہيں ۔ ماہ رمضان ميں مسلمان روزہ ركھتے ہيں اور كھانے ، پينے جيسے بہت سے مباح كاموں سے پرہيز كرتے ہيں ۔ماہ رمضان گزر جانے كے بعد شوال كے پہلے دن اپنے خدا سے اس اجر ثواب كا مطالبہ كرتے ہيں جس كا خداوند عالم نے ان سے وعدہ كيا ہے ۔  لغت ميں عيد كے معني پلٹنے كے ہيں اس لئے جس دن كسي قوم و قبيلہ سے مشكلات برطرف...

صفحات