صبح یکشنبه ۱۱ رجب المرجب ۱۴۳۸ (مطابق با ۲۰ فروردین ۱۳۹۶)، مسئول و اعضای ستاد امر به معروف و نهی از منکر استان قم با حضور در بیت مرجع عالیقدر حضرت آیت الله العظمی صافی گلپایگانی مدظله الوارف دیدار کردند. در ابتدای این دیدار، حجه الاسلام آقای معرفت...
Saturday: 29 / 04 / 2017 ( )

Printer-friendly versionSend by email
حضرت زہراء سلام اللہ علیہا کی شہادت کے ایّام میں عزاداری کے متعلق ايک استفتاء

 

 

 

بسمہ تعاليٰ 

مرجع عاليقدر حضرت آيۃ اللہ العظميٰ صافي گلپائگاني مد ظلہ العالي 
السلام عليكم ورحمۃ اللہ وبركاتہ 
نبي مكرم اسلام صلي اللہ عليہ وآلہ وسلم كي تنہا دختر حضرت فاطمہ زہراء سلام اللہ عليہا كي المناك شہادت پر تسليت پيش كرتے ہوئے ہمارا سوال يہ ہے كہ چونكہ ہميں شہادت كي صحيح تاريخ كا علم نہيں ہے تو ايسي صورت ميں كن ايام ميں آپ كي شہادت پر عزاداری كي جائے ؟ نيز آپ كي شہادت پر عزاداری کرنے كا بہترين طريقہ كيا ہے ؟

 

بسم اللہ الرحمٰن الرحيم 

عليكم السلام و رحمۃ اللہ وبركاتہ 
حضرت صديقہ كبريٰ جناب فاطمہ زہراء سلام اللہ عليہا كي شہادت كے بارے میں مختلف اقوال پائے جاتے ہيں ليكن جو علماء  تاریخ كي نظر ميں زيادہ مورد توجہ رہي ہے وہ فاطميہ اوّل( یعنی۱۳ جمادي الاول) اور فاطميہ دوّم(یعنی ۳جمادي الثانی)ہے ۔ بہتر ہے كہ شيعہ حضرات ۱۳ جمادی الاوّل سے لے كر ۳جمادی الثانی تك عزاداري كريں ، مجالس برپا كريں اور اہلبيت عليہم السلام سے اپني عقيدت و محبت كا اظہار كريں ، اور ايسے امور انجام دینے سے گریز كريں جو ايام شہادت كے لئے مناسب نہ ہوں ۔ عزاداری كا بہترين طريقہ يہ ہے كہ حضرت فاطمہ زہرا سلام اللہ علیہا كے فضائل و مصائب بيان ہوں ، آپ كي اخلاقی اور عملی سيرت كو پيش كيا جائے ، اور بالخصوص ہر دور میں یہ بیان کیا جانا چاہئے کہ کس طرح سے حضرت فامہ سلام اللہ علیہا نے امام مظلوم اميرالمومنين علي عليہ السلام كے حق كا دفاع کیا۔

انشاء اللہ مومنين كرام قرآن و اہلبيت علیہم السلام سے متمسك رہ كر بہترين طريقہ سے سیدۂ زہراء سلام اللہ علیہا كي خدمت ميں عرض ادب كریں اور بالخصوص ديندار خواتين اپنے حجاب ، عفت اور پاكدامني كی حفاظت کرتے ہوئے آنحضرت كو اپنے لئے بہترين نمونہ عمل قرار دیں۔
 

موضوع: 
استفتائاتجدیدترین
Sunday / 26 February / 2017