بحر عرفان عید میلاد امام عسکری است آن که شمس آسمانِ سروری است   آنکه بعد از حضرت هادی به حق متکی بر متّکای رهبری است   نام نیکویش حَسن، خُلقش حَسن پای تا سر حُسن و نیکو منظری است   الامام بن الامام بن...
سه شنبه: 1398/09/19 - (الثلاثاء:13/ربيع الثاني/1441)
Printer-friendly versionSend by email
امیر المؤمنین حضرت امام علی بن ابی طالب علیہما السلام کی شہادت کے چودہ سو سال کی مناسبت سے عالیقدر شیعہ مرجع حضرت آیت اللہ العظمی صافی گلپایگانی مدظلہ الوارف کا پیغام

بسم الله الرحمن الرحیم

سنہ ۱۴۴۰ ہجری کا ماہ مبارک رمضان عالمِ انسانیت کی تاریخ اور حیاتِ بشری میں بہت ہی ناگوار اور تلخ سانحہ کی یاد دلاتا ہے ۔

اس سال مکتب اسلام کے پہلے حقیقی و واقعہ موحّد ، مدرسۂ الٰہیات قرآن کے  بے مثال اور نمونہ معلم ، حضرت رسول خدا صلی اللہ علیہ و آلہ و سلم کے برحق وصی و جانشین ، عدالتِ مجسم ، مظلوموں کے یاور اور ظالموں کے دشمن ، یتیموں کے انیس و مونس اور پدر ، صاحب ولايت مطلقهٔ الهيه ، باب مدينۃ العلم نبوي اور صاحب کرامات و فضائل مرتضوي حضرت امير المؤمنين علي ابن ابيطالب عليهما ‌السلام کی شہادت کو چودہ سو سال گذر جائیں گے ۔

چودہ سو سال سے اسلامی معاشرہ بلکہ دنیائے انسانیت اور عالم علم و ادب اس امام عزیز کے فقدان و جدائی اور غمگناک و اندوہناک مصیبت پر عزادارو سوگوار ہے ۔

ان چودہ صدیوں میں امیر المؤمنین حضرت امام علی بن ابی طالب علیہما السلام کے دوستوں ، محبّوں اور شیعوں پر کیا گذری ؟ ان پر کیسے کیسے ظلم و ستم اور بے انصافیاں روا رکھی  گئیں ؟ ہزاروں مظلوم اور نہتھے  انسانوں کو صرف علی علیہ السلام کا شیعہ ہونے کے جرم میں شہید کیا گیا ، بہت سے لوگوں کو شدید تشدد کا نشانہ بنایا گیا ، بے شمار افراد کو ملک بدر کر دیا گیا ، اور بڑی تعداد میں والدین کو راہِ ولایت میں ان کے بیٹوں کی شہادت پر سوگوار بنایا گیا ؛ فَقُتِلَ مَن قُتِلَ وَ سُبِي مَن سُبِي وَ أقصِي مَن أقصِي۔

اس سال کا ماہ رمضان المبارک ان تمام مصائب ، مشکلات اور نا انصافیوں کی یاد تازہ کر دیتا ہے ۔

بندۂ حقیر ولایت و امامت کی بارگاہ میں چھوٹی سی ذمہ داری کو ادا کرنے کی غرص سے تمام حریت پسندوں ، مسلمانوں اور بالخصوص شیعوں سے درخواست کرتا ہوں کہ ماہ مبارک رمضان کے پُر فیض ایّام ، شبِ قدر کی راتوں اور حضرت مولی الموحدین امام المتقین امیر المؤمنین علی علیہ صلوات المصلین کی شہادت کے دن آپ  کی بارگاہ میں پہلے سے زیادہ ادب و اخلاص کا اظہار کریں ۔ اور اس مظلوم امام کے نورانی فضائل و مناقب کو بیان کریں ۔ مجالس عزاء ، سیمینار اور کانفرنس کے انعقاد کے ذریعے سے دنیا کے سامنے آپ کے وجود کی برکات کو آشکار کریں ۔ اسی طرح عزاداری علوی کے ماتمی جلوسوں اور دستوں کی عظمت میں بھی اضافہ کریں اور ان میں شرکت کر کے اہل بیت عصمت و طہارت علیہم السلام سے اپنی محبت و عقیدت اور عشق کا اظہار کریں اور يگانه دوران قطب عالم امکان امام زمان حضرت بقية الله الاعظم ارواح العالمين له الفداء و عجل الله تعالي فرجه الشريف کی خدمت اقدس میں تعزیت و تسلیت پیش کریں اور خداوند متعال سے امام عصر جل اللہ تعالیٰ فرجہ الشریف کے  فرج و ظهور موفور السرور ، ظالموں کے ظلم کے خاتمے اور واحد عالمی مہدوی حکومت کی تشکیل کے لئے دعا کریں ، کیونکہ ؛ إنَّهُم يَرَونَه بَعيداً وَ نَراهُ قَريباً.

لطف الله صافی
رمضان المبارک سنہ ۱۴۴۰ ہجری

 

موضوع:

پنجشنبه / 26 ارديبهشت / 1398