رسول الله صلى الله علیه و آله :شَعبانُ شَهری و رَمَضانُ شَهرُ اللّهِ فَمَن صامَ شَهری كُنتُ لَهُ شَفیعا یَومَ القِیامَةِ پیامبر صلى الله علیه و آله :شعبان ، ماه من و رمضان ماه خداوند است . هر كه ماه مرا روزه بدارد ، در روز قیامت شفیع او خواهم... بیشتر
پنجشنبه: 1401/04/9

اسلامی جمہوریہ پاکستان کے سفیر کی حجۃ الاسلام و المسمین جناب حاج شیخ حسن صافی گلپائیگانی سے ملاقات

اسلامی جمہوریہ پاکستان کے سفیر کی حجۃ الاسلام و المسمین جناب حاج شیخ حسن صافی گلپائیگانی سے ملاقات

ایران میں اسلامی جمہوریہ پاکستان کے سفیر نے اس ملک کی حکومت اور عوام کا تعزیتی پیغام پہنچایا

۲۴ فروری سنہ ۲۰۲۲ ء بروز جمعرات کو ایران میں اسلامی جمہوریہ پاکستان کے سفیر جناب رحیم حیات قریشی  صاحب ایک  وفد کے ہمراہ مرجع عالیقدر مرحوم آیت اللہ العظمی صافی گلپایگانی قدس سرہ کے بیت الشرف آئے اور پاکستان کی ملت اور حکومت  کی جانب سے اس عظیم مرجع کی رحلت کی  مناسبت سے تعزیت و تسلیت کا پیغام پہنچایا ۔

اس ملاقات میں پاکستان کے محترم سفیر نے آیت اللہ صافی گلپائیگانی کے دور حیات میں ان کے اسلامی عہدوں کو سراہتے ہوئے انہیں ایک الٰہی شخصیت کی علامت قرار دیا۔ انہوں نے عالمی مسائل اور عالم اسلام کے حالات پر اس عظیم الشان مرجع کی خصوصی توجہ کا ذکر کرتے ہوئے  اس بزرگ مرجع کو مسلمانوں اور دنیا کے مظلوموں کے لئے دلسوز ، ہمدرد اور فکرمند قرار دیا ۔

اس ملاقات میں حجۃ الاسلام و المسلمین جناب حاج شیخ محمد حسن صافی گلپائیگانی نے  مرجع عالیقدر آیت اللہ العظمی صافی قدس سرہ کی رحلت کی  مناسبت سے پاکستان کے سفیر اور ان کے ہمراہ آنے والے  وفد کی تعزیت و تسلیت پیش کرنے  پر ان کا شکریہ ادا کیا  ، اور اس جانب اشارہ کیا کہ  یہ مرجع عالیقدر ہمیشہ مظلوموں اور پاکستان کے مسلمانوں پر خاص  توجہ دیتے تھے :

وہ اسلامی ممالک اور خصوصاً پاکستان جیسے پڑوسی ممالک کے روزمرہ کے مسائل اور خبروں  پر گہری نظر رکھتے تھے اور وہاں کے حالات و واقعات سے باخبر رہتے تھے اور جہاں ضرورت ہوتی  تھی ، وہاں مظلوموں اور مسلمانوں کے دفاع میں بات کرتے تھے یا کوئی بیان جاری کرتے تھے یا عہدیداروں کو  تنبیہ کرنے میں دریغ نہیں  کرتے تھے۔

حوزۂ علمیہ قم میں درس خارج کے استاد جناب حجۃ الاسلام و المسلمین حاج آقا حسن صافی نے  اس ملاقات  کے دوران مرحوم آیت اللہ العظمی صافی گلپائیگانی قدس سرہ کی پاکستانی عوام اور طلاب سے خاص الفت کو بیان کرتے ہوئے کہا :  مرحوم آیت اللہ العظمیٰ صافی گلپائیگانی  پاکستان کی عزیز عوام اور اس ملک کے طلاب سے خاص الفت اور عقیدت رکھتے تھے  اور  ہمیشہ ان کی جانب سے  دینی غیرت اور اسلامی شناخت کی حفاظت کرنے پر ان کی تمجید و تحسین کرتے تھے ۔

حجۃ الاسلام و المسلمین جناب حسن صافی گلپائیگانی نے مملکت پاکستان میں دانشوروں کی کثرت کی طرف اشارہ  کرتے ہوئے کہا :  مرحوم آیت اللہ  والد مکرم رضوان اللہ تعالیٰ علیہ مملکت پاکستان کے بہت سے علماء ، دانشوروں اور شعرا کی  کتابوں کا مطالعہ کرتے تھے اور مختلف موقعوں پر اقبال لاہوری کے حماسی اشعاری کو حفظ کر کے پڑھتے تھے ۔

انہوں نےاس ملاقات کے  آخر میں دوبارہ تمام حاضرین کا شکریہ ادا کیا اور خداوند متعال کی بارگاہ میں   پوری دنیا میں مسلمانوں  کی عزت ، ترقی اور  قرآن و اہل بیت علیہم السلام کےزیر سایہ پاکستان کی شریف ملت  کی عظمت میں اضافے کی دعا کی  ۔

 

موضوع:

ویژه نامه ارتحال: 
برداشتن از قسمت ویژه نامه ارتحال

مراجع عظام کے تعزیتی پیغام

مراجع عظام کے تعزیتی پیغام
حضرت آیت الله العظمی صافی گلپایگانی رضوان الله تعالی علیه کی رحلت کی مناسبت سے مراجع عظام کے تعزیتی پیغام

حضرت آیت الله العظمی جوادی آملی

بسم الله الرحمن الرحیم

انا لله وانا الیه راجعون

شیخ الفقهاء و المراجع حضرت آیة الله العظمی حاج شیخ لطف الله صافی گلپایگانی (قدس الله نفسه الزکیه) کی افسوسناک رحلت پر ختمی امامت حضرت ولی عصر (أرواحنا فداه) ، مراجع تقلید، دنیائے اسلام کے حوزات علمیّه ، اساتید معظم اور اس عظیم الشأن مرجع  کے اہل خانہ کی خدمت میں تسلیت و تعزیت پیش کرتا ہوں اور خداوند متعال کی بارگاہ  میں فقیه راحل کے علو درجات سب کے لئے صبر جمیل کی دعا کرتا ہوں .

 

حضرت آیت الله العظمی  روحانی

بسم الله الرحمن الرحیم

الَّذِینَ تَتَوَفَّاهُمُ الْمَلائِكَةُ طَیِّبِینَ یَقُولُونَ سَلامٌ عَلَیْكُمْ ادْخُلُوا الْجَنَّةَ بِما كُنْتُمْ تَعْمَلُونَ
صدق الله العلی العظیم

جلیل ‌القدر عالم حضرت آیت الله العظمی لطف الله صافی گلپایگانی کی رحلت پر مکتب اہل بیت علیہم السلام اور بالخصوص تمام مسلمانوں کی خدمت میں تسلیت و تعزیت پیش کرتا ہوں ۔ ہم قضا و قدر الٰہی کے سامنے راضی اور اس کے حکم اور مشیت کے سامنے تسلیم ہیں ۔

آپ کا شمار ان علماء میں ہوتا ہے جنہوں نے اپنی  زندگی مؤمنین کے عقائد کی تثبیت اور علوم و معارف اسلام کی نشر و اشاعت میں بسر کی ۔

خداوند متعال فقیہ راحل کی روح کو غریق رحمت واسعہ فرمائے اور حضرت محمد صلی اللہ علیہ و آلہ و سلم اور آپ کے خاندان اطہار صلوات اللہ علیہم اجمعین کے ساتھ محشور فرمائے ۔

 

حضرت آیت الله العظمی  سبحانی

بسم الله الرحمن الرحیم
إِذَا مَاتَ الْعَالِمُ ثُلِمَ فِی الْإِسْلَامِ ثُلْمَةٌ لَا یَسُدُّهَا شَیْءٌ إِلَى یَوْمِ الْقِیَامَةِ.

بڑے دکھ اور افسوس کے ساتھ عالم ربانی، عالی قدر محقق ، نامور فقیه ، حریم اسلام و اہل بیت علیهم السلام کے مدافع مرحوم آیت الله العظمی صافی کے انتقال کی خبر غم نہایت ہی افسوس اور شکستہ دل کے ساتھ موصول ہوئی ۔

ایک ایسے عالم کی وفات جو ستر سال سے زائد عرصے تک بیان اور قلم کے ذریعہ تدریس و تألیف میں مصروف عمل رہے اور آپ نے اپنے لازوال اور قیمتی آثار بطور یادگار چھوڑے ، اس کی ایک واضح مثال ’’ثلاثہ فی الاسلام‘‘ ہے ۔

فقاہت اور استنباط احکام میں مصروف عمل رہتے ہوئے آپ ہمیشہ دشمنوں کے اعتراضات پر نظر رکھتے تھے اور اپنے قلم کی روانی سے حقائق کو آشکار کرتے تھے ۔

آپ نے اپنی زندگی کا کچھ حصہ نجف اشرف میں گزارا اور فقہ کا شیریں ثمر اپنے ساتھ  لائے ، اور پھر قم میں آیات عظام سے مستفید ہوئے اور آپ آیت اللہ العظمی بروجردی کی ہیئت استفتاء کے ایک محور تھے ۔ آپ کے مذکورہ استاد نے آپ کو  حضرت ولی عصر عجل اللہ تعالیٰ فرجہ الشریف کے بارے میں کتاب تأکیف کرنے کی ذمہ داری سونپی اور  آپ کے لئے تألیف کا اسلوب بھی بیان کیا ۔ آپ نے اپنے استاد کے حکم کی تعمیل کرتے ہوئے بہترین کتاب تألیف کی جو آج کے مؤلفین کے لئے ایک مرجع کی حیثیت رکھتی ہے ، اور جسے آخر میں «منتخب الاثر فی الامام الثانی عشر»  کے  نام سے تین جلدوں میں شائع کیا گیا ، جو بہت ہی درخشاں اور مفید ہے ۔

میں اس  مصیبت  اور ناقابل تلافی نقصان پر حضرت بقیۃ اللہ الاعظم (عجل اللہ تعالیٰ فرجہ الشریف) مراجع  کرام ، حوزہ کے علماء ، عقیدت مندوں ، ان کے چاہنے والوں اور  خاص طور سے مرحوم آیت اللہ العظمیٰ گلپایگانی کے اہل خانہ ، تمام پسماندگان اور بالاخص آپ کے فرزند جناب حاج شیخ حسن صافی کی خدمت میں تسلیت پیش کرتا ہوں اور خداوند متعال سے اس فقید سعید کے علو درجات اور سب کے لئے صبر جمیل کی دعا کرتا ہوں ۔

و سلام الله علیه یوم ولد و یوم مات و یوم یبعث حیّا

 

حضرت آیت الله العظمی سیستانی

بسم الله الرحمن الرحیم

انا لله و انا الیه راجعون

عالم ربانی ، عالی قدر مرجع جناب آیت اللہ حاج شیخ لطف اللہ صافی گلپایگانی (رضوان اللہ علیہ) کے انتقال کی خبر انتہائی دکھ اور افسوس کا باعث بنی ۔  اس بزرگ شخصیت کا فقدان بہت بڑا نقصان ہے ، جو حوزہ علمیہ قم کے ستون ، اس دور کی حسنات اور دین و مذہب کے بے مثال خادم تھے ۔

میں اس دردناک مصیبت پرحضرت ولی عصر ارواحنا لہ الفداء کی بارگاہ میں ، علماء کرام ، ان کے مکرم رشتہ داروں اور ان کے محترم عقیدت مندوں کی خدمت میں تعزیت و تسلیت پیش کرتا ہوں اور اور خداوند متعال سے اس فقید سعید کے بلندیِ درجات اور ان کے پسماندگان کے لئے صبر جمیل اور اجر جزیل کی دعا کرتا ہوں۔

 

 حضرت آیت الله العظمی  شبیری زنجانی

انّا لله و إنّا إلیه راجعون

فقیه اهل‌بیت عصمت و طهارت (علیہم‌السلام) ، آیت‌ الله ‌العظمی آقای حاج شیخ لطف‌الله صافی گلپایگانی (رضوان‌ الله‌ علیه)  کی افسوسناک رحلت پر امام زمانہ حضرت بقیۃ اللہ الأعظم عجل اللہ تعالیٰ فرجہ الشریف ، حوزات علم ، شیعوں اور بالخصوص آپ  کے معظم اہل خانہ کی خدمت میں تسلیت پیش کرتا ہوں ۔

اس معظم فقیہ کو حضرت ولی‌ عصر (عجل‌ الله فرجه ‌الشریف) سے خاص عقیدت تھی ، آپ نے اپنی  بابرکت عمر اسلام کی نورانی تعلیمات اور مکتب اہل بیت علیہم السلام کی ترویج ، منحرف افکار کے خلاف مبارزہ آرائی میں بسر کی اور آپ نے فضلا کی تربیت ، بہترین تألیفات ، سماجی خدمات اور اپنی بے شمار حسنات کو بطور یادگار چھوڑا ہے ۔

اس عالی قدر مرجع کی خدمات حوزات علمیہ ،محققین اور مذہب تشیع کے مبلغین کے لئے ناقابل فراموش ہیں ۔

خداوند متعال اس متقی اور پارسا فقیہ کی روح کو انبیاء اور اولیائے الٰہی کے ساتھ محشور فرمائے ۔

 

حضرت آیت الله العظمی علوی گرگانی

باسمه تعالی
قال الله تعالی: « الذین تتوفاهم الملائکة طیبین یقولون سلام علیکم ادخلوا الجنة»

متقی و پارسا عالم شیخ الفقهاء و المجتهدین ، دنیائے تشیع کے عظیم الشأن مرجع حضرت آیت الله العظمی حاج شیخ لطف الله صافی گلپایگانی نے اپنی عمر مبارک دینی تعلیمات کی تبلیغ و ترویج ، دین مبین اسلام کے اصولوں کی حمایت ، شرعی احکام کے بیان اور اسلامی نظام کے عہدیداروں کو نصیحت کرنے اور ان کی رہنمائی کرنے میں گزاری ۔ ان کی رحلت بہت زیادہ دکھ کا باعث بنی ۔

فاضل شاگردوں کی تربیت کرنا ، ولایت و مہدویت کے دفاع اور فقہی اجتہاد کے موضوعات پر کتب تألیف کرنا ، ہمدردانہ وعظ و نصیحت کرنا ، مسلمانوں کی ہدایت کرنا ، شوریٰ نگہبان (گارڈین کونسل) اور مجلس خبرگان رہبری میں آپ کی رکنیت اور گرانقدر خدمات قیامت کے دن آپ کے لئے ذخیرہ ہوں گی ۔

میں اس ناقبل تلافی نقصان پر سب سے پہلے امام عصر عجل اللہ تعالیٰ فرجہ الشریف اور اسی طرح مقام معظم رہبری ، مراجع تقلید ، حوزات علمیه بالخصوص حوزه علمیه قم ، تمام شیعوں ، مقلدین اور عقیدت مندوں اور بالاخص  مرحوم آیت الله العظمی گلپایگانی کے اہل خانہ اور ان کے فرزند حضرت حجت الاسلام و المسلمین حاج شیخ حسن صافی گلپایگانی کی خدمت میں تسلیت و تعزیت عرض کرتا ہوں اور خدا کی بارگاہ میں مرحوم  کے علو درجات اور پسماندگان کے لئے اجر جزئل کی دعا کرتا ہوں .

 

حضرت آیت الله العظمی فیاض

بسم الله الرحمن الرحیم

انا لله و انا الیه راجعون

جلیل القدر عالم حضرت آیت الله حاج شیخ لطف الله صافی گلپایگانی (قدس سره) کے انتقال کی خبر بہت دکھ اور افسوس کا باعث بنی ۔اس بزرگوار عالم کی فقدان حوزات علمیہ اور شیعوں کے لئے بہت بڑا نقصان ہے ۔

میں اس بزرگوار کے فقدان پر ولی اللہ الاعظم امام زمان (عج اللہ تعالیٰ فرجہ الشریف) ، مراجع عظام ، حوزات علمیہ اور بالخصوص حوزۂ علمیہ قم ، مرحوم آیت اللہ العظمی گلپائیگانی کے اہل خانہ اور بالخصوص ان کے فرزند مکرم حجۃ الاسلام شیخ حسن صافی ، تمام پسماندگان اور مؤمنین کی خدمت میں تعزیت و تسلیر عرض کرتا ہوں ، اور مرحوم کے درجات کی بلندی اور پسماندگان کے لئے صبر جمیل اور اجر جزیل کی دعا کرتا ہوں ۔

 

حضرت آیت الله العظمی مکارم شیرازی

بسم الله الرحمن الرحیم

إِنَّا لِلّهِ وَإِنَّا إِلَیْهِ رَاجِعونَ

 

یہ عظیم شخصیت کا شمار آیت اللہ العظمی ٰ بروجردی قدّس سرّہ کے برجستہ اور نمایاں شاگردوں میں ہوتا ہے اور آپ ہمارے زمانے کے برترین فقہاء میں سے ایک تھے ۔  مختلف شعبوں میں آپ نے بے شمار آثار منجملہ فقہی و کلامی کتب ، منحرف فرقوں کا مقابلہ ، مذہبی  مراکز کی تعمیر اور تجدید ، جیسے عظیم مسجد امام حسن عسکری علیہ السلام کو یادگار کے طور پر چھوڑا ۔

مختلف سماجی میدانوں میں آپ کی مؤثر موجودگی ، جیسے سابقہ رژیم  کے خلاف جدوجہد ،  قانون اسانی کی مجلس خبرگان  اور شوریٰ نگہبان میں آپ کی رکنیت ؛ اسلام اور انقلاب کے لئے بہت زیادہ برکات کا باعث تھی ۔ 

میں اس دلسوز فقیہ کی رحلت پر حضرت ولی عصر ارواحنا فداہ کی خدمت اقدس میں تعزیت و تسلیت پیش کرتا ہوں ، اور اسی طرح حوزات علمیہ ، مراجع کرام ، تمام شیعوں ، مقلدوں، عقیدت مندوں اور بطور خاص بیت معظم  اور ان کے محترم و مکرم فرزندوں کی خدمت میں تسلیت  پیش کرتا ہوں اور خداوند متعال سے  دعاگو ہوں کہ خدا انہیں اپنے مقرب اولیاء کے ساتھ محشور فرمائے اور ان کے پسماندگان کو صبر جمیل اور اجر جزیل عطا فرمائے ۔

 

 

حضرت آیت الله العظمی  نوری همدانی

بِسْمِ اللَّهِ الرَّحْمَنِ الرَّحِیمِ

إِنَّا لِلَّهِ وَإِنَّا إِلَیْهِ رَاجِعُونَ

عَنْ عَلِیِّ بْنِ أَبِی حَمْزَةَ قَالَ سَمِعْتُ أَبَا الْحَسَنِ مُوسَى بْنَ جَعْفَرٍ علیهما السلام یَقُولُ‏ إِذَا مَاتَ‏ الْمُؤْمِنُ‏ بَكَتْ‏ عَلَیْهِ الْمَلَائِكَةُ وَ بِقَاعُ الْأَرْضِ‏ الَّتِی كَانَ یَعْبُدُ اللَّهَ عَلَیْهَا وَ أَبْوَابُ السَّمَاءِ الَّتِی كَانَ یُصْعَدُ فِیهَا بِأَعْمَالِهِ وَ ثُلِمَ فِی الْإِسْلَامِ ثُلْمَةٌ لَا یَسُدُّهَا شَیْ‏ءٌ لِأَنَّ الْمُؤْمِنِینَ الْفُقَهَاءَ حُصُونُ الْإِسْلَامِ كَحِصْنِ سُورِ الْمَدِینَةِ لَهَا.

مرجع عالی قدر حضرت آیت الله العظمی شیخ الفقهاء جناب صافی گلپائیگانی «اعلی الله مقامه» کے انتقال کی خبر انتہائی دکھ اور افسوس کا باعث بنی ۔

یہ بزرگوار فقیہ اسلام اور حوزات علمیہ کے ارکان  اور آیت اللہ العظمی بروجردی کے نمایاں شاگردوں میں سے ایک تھے اور آپ  امام «رحمة الله علیهما»کے مورد عنایت  اور خاص معتمد تھے ۔ آپ حضرات معصومین «علیهم السلام» سے خاص عقیدت رکھتے تھے ، منحرف فرقوں کے خلاف جدوجہد ، فقہی و کلامی کتب کی تألیف اور سماجی و سیاسی میدان میں مؤثر موجودگی اس مرحوم کی خصوصیات تھیں ۔

میں اس عالی قدر فقیہ کے انتقال پر امام عصر «علیه السلام» کی بارگاہ اقدس ، حوزات علمیہ ، مراجع کرام ، عقیدت مندوں ، شیعوں اور معظم لہ کے اہل خانہ کی خدمت میں تسلیت عض کرتا ہوں اور اس بزرگوار فقیہ کے علوِ درجات کے لئے دعاگو ہوں ۔

 

آیت الله العظمی وحید

آیت الله العظمی صافی گلپایگانی رضوان الله علیه کی رحلت پر  آیت الله  العظمی وحید خراسانی نے ٹیلی فون کال کے ذریعہ اس بزرگ عالم دین کی وفات پر ان کے معزز خاندان سے تعزیت کی اور خداوند متعال کی بارگاہ مں اس جلیل القدر عالم کی علو درجات اور سید الشہداء حضرت امام حسین علیہ السلام کی ہم نشینی کے لئے دعا کی ۔

اسی طرح آیت الله وحید خراسانی کے فرزندوں نے بھی مرحوم کے بیت الشرف اور دفتر میں حاضی دی اور آیت اللہ وحید خراسانی کی جانب سے مرحوم کے معزز و مکرم خاندان سے تعزیت کا اظہار کیا ۔ 

 

موضوع:

ویژه نامه ارتحال: 
برداشتن از قسمت ویژه نامه ارتحال

رہبر معظم انقلاب کا تعزیتی پیغام

رہبر معظم انقلاب کا تعزیتی پیغام
رہبر معظم انقلاب کا تعزیتی پیغام
حضرت آیت‌ الله العظمی صافی گلپایگانی رضوان الله تعالی علیه کے انتقال کی مناسبت سے رہبر معظم انقلاب کا تعزیتی پیغام
إِنَّا لِلَّهِ وَإِنَّا إِلَیْهِ رَاجِعُونَ

بسم اللہ الرحمن الرحیم

عالی مقام فقیہ اور بابصیرت مرجع حضرت  آیت اللہ العظمی الحاج شیخ لطف اللہ صافی گلپائیگانی رضوان اللہ علیہ کے انتقال کی افسوسناک خبر موصول ہوئی ۔ آپ حوزۂ علمیہ قم  کے ایک ستون اور  علمی و عملی لحاظ سے برجستہ اور نمایاںشخصیات میں سے تھے ، اور اس مبارک حوزہ میں سب سے سابقہ عالم تھے ۔

مرحوم آیت اللہ بروجردی کے زمانے میں آپ اس عظیم استاد کے سب سے ممتاز شاگردوں میں سے تھے ، مرحوم آیت اللہ سید محمد رضا گلپائیگانی کے زمانے میں آپ ان کے ہمراہ تھے اور ان کے علمی و عملی مشیر تھے ،  انقلاب کے زمانے میں آپ  کا شمار حضرت امام خمینی رحمۃ اللہ علیھم کے امین اور معتمد افراد میں ہوتا تھا ۔ آپ کئی برسوں تک شوریٰ نگہبان کے کلیدی رکن شمار کئے جاتے تھے اور اس کے بعد بھی آپ ہمیشہ انقلاب اور ملک کے مسائل کے بارے میں ہمدردانہ اور ذمہ دارانہ طریقے سے اپنا موقف بیان کرتے تھے۔ آپ اکثر اپنے نظریات اور مشوروں سے حقیر کو مطلع اور بہرہ مند کیا کرتے تھے ۔

آپ کا شعری ذوق، تاریخی حافظہ اور سماجی مسائل پر عبور، اس بزرگ اور عظیم عالم دین کی شخصیت کے کچھ اور پہلو تھے۔ آپ کی وفات ملک کے علمی و دینی سماج اور حلقوں کے لئے باعث افسوس ہے ۔

میں ان کے معزز اہل خانہ، ان کے محترم بچوں اور اسی طرح معزز و معظم مراجع ، حوزۂ علمیہ کے علمائے کرام ، ان کے مقلدین اور عقیدت مندوں بالخصوص قم اورگلپائیگان میں ان کے عقیدت مندوں کی خدمت میں تعزیت پیش کرتا ہوں اور مرحوم کے لئے رحمت و مغفرت الٰہی کی دعا کرتا ہوں ۔

سید علی خامنہ ای

 

موضوع:

ویژه نامه ارتحال: 
برداشتن از قسمت ویژه نامه ارتحال

مرحوم آیت اللہ العظمی صافی گلپائیگانی کی تشییع جنازہ کل ادا کی جائے گی

مرحوم آیت اللہ العظمی صافی گلپائیگانی کی تشییع جنازہ کل ادا کی جائے گی

بسم الله الرحمن الرحیم
السلام علیک یا اباعبدالله و علی الارواح التی حلت بفنائک و اناخت برحلک

ایران کے معزز اور مؤمن عوام کو مطع کیا جاتا ہے کہ زعیم حوزات علمیہ حضرت آیت اللہ العظمیٰ صافی گلپائیگانی رضوان اللہ تعالیٰ علیہ کی تشییع جنازہ اور الوداعی رسومات کل بروز بدھ صبح ۱۰ بجے قم المقدس میں جہاد اسکوائر پر واقع مدرسہ امام خمینی سے حضرت معصومہ سلام اللہ علیہا کے حرم مطہر تک منعقد ہوں گی ۔

تقویٰ اور فقاہت کے پیکر حضرت آیت اللہ العظمیٰ صافی گلپائیگانی رضوان اللہ تعالیٰ علیہ کی مؤکد وصیت کی بنا پر آپ کو سرور شہیداں حضرت ابا عبد اللہ الحسین علیہ السلام کے حرم مطہر میں سپرد خاک کیا جائے گا  اور صبح قیامت تک آپ آستان ملائک کے جوار میں متنعم رہیں گے ۔ انشاء اللہ ۔

 وَ سلام عَلَیه یَوْمَ وُلِدْ وَ یَوْمَ یموت وَ یَوْمَ یبعث حَیًّا

مراسم ارتحال کے انعقاد کی کمیٹی 

موضوع:

انا لله و انا الیه راجعون

انا لله و انا الیه راجعون

بسم الله الرحمن الرحیم

الذین تتوفیهم الملائکه طیبین یقولون سلام علیکم ادخلوا الجنه بما کنتم تعملون.

چند لمحہ پہلے ایک بیدار مرجع ، عالم ، اہلبیت عصمت و طہارت علیہم السلام کی حرمت کے غیور محافظ و پاسبان ، حق و احکام الٰہی کی گویا زبان ، حضرت ولی عصر ارواحنا فداء کے خادم ، زعیم حوزات علمیہ حضرت آیت الله العظمیٰ صافی گلپائیگانی قدس سرہ الشریف  کا قلب حکم الٰہی سے بند ہوگیا، جن کی روح لقائے پروردگار کی مشتاق تھی ، جو جسم کے حصار کو توڑ کر ملکوت اعلی سے جا ملی۔
اس عظیم اور عالی قدر مرجع کا با افتخار کارنامہ اسلام اور تشیع کی خیر خواہی ،نصیحت اور خدا کے بندوں کے لئے ہمدردی اور دلسوزی ہے۔
اس ناقابل تلافی نقصان پر آپ کے محبوب اور آقا و مولا حضرت بقیۃ الله الاعظم عجل الله تعالی فرجہ الشریف کی بارگاہ اقدس میں تعزیت پیش کرتے ہیں ۔ نیز حوزات علمیہ، ایران کے معزز عوام اور دنیا کے تمام خطوں میں مرجعیت کے چاہنے والوں کی خدمت میں تعزیت پیش کرتے ہوئے یہ اطلاع دی جاتی ہے کہ پیکر مطہر کی تشییع و تدفین کا اعلان بعد میں کیا جائے گا ۔

دفتر حضرت آیت الله العظمی صافی گلپایگانی رضوان الله علیه

موضوع:

افغانستان میں دہشت گردی کے واقعے کی مناسبت سے عظیم الشأن شیعہ مرجع کا پیغام

افغانستان میں دہشت گردی کے واقعے کی مناسبت سے عظیم الشأن شیعہ مرجع کا پیغام
افغانستان میں دہشت گردی کے واقعے کی مناسبت سے عظیم الشأن شیعہ مرجع حضرت آیت اللہ العظمی صافی گلپایگانی دام ظلہ الوارف کا پیغام

بسمه تعالی

وَ مَنْ‌ قُتِلَ‌ مَظْلُوماً فَقَدْ جَعَلْنَا لِوَلِیِّهِ‌ سُلْطَاناً

افغانستان میں خدا سے بے خبر اور انسانیت سے دور گروہ کے ہاتھوں بہت سے معصوم بچوں اور مظلوم انسانوں کی شہادت اور کثیر تعداد میں زخمی ہونے کا المناک واقعہ دنیائے اسلام میں غم اور افسوس کا باعث بنا ۔

رمضان المبارک کے مقدس مہینے کے دوران ، جو رحمت و ضیافت الٰہی کا مہینہ ہے ، بیگانوں کے کارندوں اور انسانیت کے دشمنوں نے روزہ دار مسلمان خاندانوں کی ایک بڑی تعداد کو عزادار و سوگوار بنا دیا ، اور پیکرِ عالم اسلام پر بہت بڑا وارد کیا ۔

اگر پیغمبر اسلام صلی اللہ علیہ و آلہ و سلم کی امت اور اسلامی ممالک اس طرح کے خوفناک اور وحشتناک جرائم کی مذمت کرتے  اور اسلام کے دشمنوں کے سامنے اپنی خاموشی کو توڑ دیتے تو  انہیں اپنے لئے اس سے زیادہ ذلت و خواری برداشت نہ کرنا پڑتی ،  اور پھر  وحشی و درندہ جانوروں سے بھی سبقت لے جانے والوں میں ایسے خوفناک جرائم انجام دینے اور دنیا کی نظر میں رحمانی اسلام کے چہرے کو داغدار کرنے کی ہمت و جرأت نہ ہوتی ۔

ہم اس دلخراش اور اندوہناک واقعہ کی مذمت کرتے ہوئے تمام سوگوار خاندانوں اور افغانستان کی شریف قوم کی خدمت میں تعزیت و تسلیت عرض کرتے ہیں ، اور خداوند متعال سے دعا گو ہیں کہ وہ اس واقعہ کے عزیز شہداء کی ارواح کو حضرت سید الشہدا علیہ السلام کے ساتھ محشور فرمائے  ، جب کہ بیماروں اور زخمیوں کو شفاء کامل عنایت فرمائے ۔

 

لطف الله صافی /قم المقدسہ

27/رمضان المبارک سنہ 1442  ہجری

 

موضوع:

مرجع عالیقدر حضرت آیت الله العظمی صافی گلپایگانی کے دفتر کی جانب سے اطلاعیہ

مرجع عالیقدر حضرت آیت الله العظمی صافی گلپایگانی کے دفتر کی جانب سے اطلاعیہ

باسمه تعالی

ہم ہوائی جہاز کے گرنے کے افسوسناک  واقعہ پر مرحومین کے پسماندگان کی خدمت میں ایک مرتبہ پھر تسلیت و تعزیت پیش کرتے ہیں اور اسی طرح ہم کرمان کے سانحہ میں جان بحق ہونے والے افراد کے لواحقین کی خدمت میں بھی تسلیت و تعزیت پیش کرتے ہیں اور خدا کی بارگاہ میں ان تمام مرحومین کی مغفرت و رحمت اور پسماندگان کے لئے صبر و اجر کے لئے دعاگو ہیں ۔ نیز یہ اطلاع دی جاتی ہے کہ  ۹۸/۱۰/۲۵ بروز بدھ نماز مغربین کے بعد حوزۂ علمیہ قم کی جانب سے مسجد اعظم میں مجلس ترحیم کا انعقاد کیا گیا ہے۔ اس مجلس میں آپ تمام مؤمنین کرام ، علماء و طلاب ذوی الاحترام کی شرکت پسماندگان کے لئے تسکین قلب کا باعث ہو گی ۔

دفتر آیت الله العظمی صافی گلپایگانی

موضوع:

آیت اللہ العظمی صافی گلپایگانی کا سیستان و بلوچستان کے سیلاب زدہ علاقوں کی طرف ہیئت (کمیٹی) کا بھیجنا اور سیلاب زدہ لوگوں کی مدد کے لئے سہم مبارک امام علیہ السلام کا تیسرا حصہ خرچ کرنے کی اجازت دینا

آیت اللہ العظمی صافی گلپایگانی کا سیستان و بلوچستان کے سیلاب زدہ علاقوں کی طرف ہیئت (کمیٹی) کا بھیجنا اور سیلاب زدہ لوگوں کی مدد کے لئے سہم مبارک امام علیہ السلام کا تیسرا حصہ خرچ کرنے کی اجازت دینا

مرجع عالیقدر حضرت آیت اللہ العظمی صافی گلپیگانی دام ظلہ الوارف نے سیستان و بلوچستان میں سیلاب کے افسوسناک واقعہ پر سیلاب زدہ لوگوں سے ہمدردی کا اظہار کیا اور سیلاب زدہ علاقوں کی موجودہ صورت حال  کا جائزہ لینے اور ان علاقوں  کے شریف لوگوں کی مدد کے لئے ایک ہیئت (کمیٹی) کو ان علاقوں کی طرف بھیجا اور فرمایا کہ : محترم مؤمنین سیلاب زدہ لوگوں کی مدد کرنے کے لئے سہم مبارک امام علیہ السلام کے تیسرے حصہ سے استفادہ کر سکتے ہیں ۔

نیز آپ نے تمام مسئولین اور لوگوں سے اس بات کا تقاضا کیا کہ وہ ان سیلاب زدہ لوگوں کی مدد کرنے اور ان کی مشکلات کو رفع کرنے کے لئے اقدامات کریں  ۔

موضوع:

حضرت آیت اللہ العظمیٰ صافی گلپایگانی کی قابلِ قدر  کتاب "النهضة الحسینیة و علم الامام علیه‌السلام" عتبه مقدّسه حسینیه کے توسط سے زیور طبع سے آراسته ہو گئی ۔

حضرت آیت اللہ العظمیٰ صافی گلپایگانی کی قابلِ قدر  کتاب "النهضة الحسینیة و علم الامام علیه‌السلام" عتبه مقدّسه حسینیه کے توسط سے زیور طبع سے آراسته ہو گئی ۔
حضرت آیت اللہ العظمی صافی گلپایگانی کی کتاب ’’ النهضه الحسینیه و علم الامام(ع) ‘‘ کی رونمائی

محترم محققین اور اہل تحقیق حضرات  توجہ فرمائیں  :

حضرت آیت اللہ العظمیٰ صافی گلپایگانی کی قابلِ قدر  کتاب "النهضة الحسینیة و علم الامام علیه‌السلام" عتبه مقدّسه حسینیه کے توسط سے زیور طبع سے آراسته ہو گئی ۔

 کریم اہل بیت امام حسن مجتبیٰ علیہ السلام کی ولاست با سعادت کے موقع پر عتبہ مقدسۂ حسینیہ کے تحت اشراف مؤسسہ وارث الأنبیاء کے مسئول اور معاونین نے شیعوں کے عالیقدر مرجع حضرت آیت اللہ العظمیٰ صافی گلپایگانی سے ان کے بیت الشرف میں ملاقات کی اور اس ملاقات میں امام حسن مجتبیٰ علیہ السلام کی ولادت کے ایّام کی مبارک باد پیش کی اور اس کے ضمن میں کتاب "النهضة الحسینیة و علم الامام علیه‌السلام" کے کچھ نسخے بھی آپ کی خدمت میں پیش کئے ۔

 حجة الاسلام و المسلمین جناب شیخ رافد التمیمی نے عتبۂ حسینیہ کی تولیت کی جانب سے سلام پہنچایا اور ’’ النهضة الحسینیة و علم الامام علیه السلام"  کے عنوان سے حضرت آیت اللہ العظمی صافی گلپایگانی کی کتاب ’’ شہید آگاہ ‘‘ کے ترجمہ اور اس کی اشاعت کو عتبہ اور مؤسسہ وارث الأنبیاء کے لئے باعث افتخار قرار دیا ۔ اور  انہوں نے اس گرانقدر کتاب کو اس موضوع پر کامل ترین کتاب قرار دیا ۔

نیز انہوں نے مختلف ممالک میں عربی زبان میں نہضت و تحریک کربلا کے متعلق شہات کی نشر و اشاعت کی وجہ سے اس بارے میں کسی جامع کتاب کی ضرورت کو مدنظر رکھتے ہوئے کہا کہ : عتبہ اور مؤسسہ کی علمی کمیٹی کے اراکین کی تحقیقات کی بناء پر شبہات کا جواب دینے کے لئے  انہوں نے علمی اور سلیس و آسان تحریر کے لحاظ سے کتاب ’’شہید آگاہ ‘‘ کو بہترین کتابوں میں سے قرار دیا اور تقریباً ایک سال پہلے ماہر مترجمین کے توسط سے اس کتاب کے ترجمہ کا کام شروع ہوا ۔

الحمدلله ! اس مؤسسہ کے محققین کی ہمت اور کوشش کے بعد ہمیں یہ افتخار حاصل ہوا کہ ہم ماہِ مبارک رمضان اور کریم اہل بیت امام حسن مجتبیٰ علیہ السلام کی ولادت با سعادت کے موقع پر یہ کتاب اہل تحقیق حضرات کی خدمت میں پیش کریں ۔

 اس ملاقات کے دوران حضرت آیت اللہ العظمیٰ صافی گلپایگانی نے ان حضرات اور ان معاونین کا شکریہ ادا کرتے ہوئے فرمایا : میں بہت افتخار محسوس کر رہا ہوں کہ بندۂ حقیر کی کتاب عتبۂ مبارکہ و مقدسہ حسینہ کے نام سے متبرک ہو گئی  اور میں اسے اپنے لئے بزرگ توفیق سمجھتا ہوں۔

مرجع عالیقدر  حضرت آیت اللہ العظمیٰ صافی گلپایگانی نے اپنے بیانات میں فرمایا : میں امید کرتا ہوں کہ امر اہل بیت علیہم السلام کے احیاء میں عتبۂ حسینیہ اور مؤسسہ وارث الأنبیاء کے اقدامات حضرت ولی عصر عجل اللہ تعالیٰ فرجہ الشریف کی رضائیت کا باعث بنیں ۔

 

 

 

موضوع:

زکات فطره اور روزے کے کفارے کی مقدار کے بارے میں اطلاعیہ

زکات فطره اور روزے کے کفارے کی مقدار کے بارے میں اطلاعیہ

بسمه تعالی

ہم تمام روزہ داروں کی اطاعات و عبادات کی قبولیت کے لئے دعا گو ہیں ۔  مرجع عالیقدر حضرت آیت‌ الله العظمی صافی گلپایگانی مدظله الوارف کی نظر میں زکات فطره‌ اور روزے کے کفارے کی مقدار و میزان کی تفصیلات کچھ یوں ہیں :

 

 مؤمنین ایک صاع ( ۳ کلو گرام ) گندم یا چاول کی قیمت کو قوتِ غالب کے عنوان سے زکاۃ فطرہ  کے طور پر ادا کریں ۔

 غیر عمدی روزے کے  کفارے میں ہر دن کا کفارہ ایک مد ( تقریباً ۷۵۰ گرام ) طعام ( مثلاً گندم)  ہے  ۔

 عمداً روزہ افطار کرنے کا کفارہ یہ ہے کہ ہر دن کے بدلے ساٹھ مساکین میں سے ہر ایک مسکین کو ایک مد ( تقریبا ۷۵۰ گرام ) طعام دے (مثلاً گندم ) ادا کرے ۔

 

چونکہ مختلف شہروں میں گندم اور چاول  کی قیمت مختلف ہوتی ہے ، لہذا روزہ دار حضرات جس شہر میں بھی زندگی بسر کر رہے ہوں ، اسی شہر میں گندم یا چاول کی قیمت کے حساب سے مذکورہ میزان و مقدار کے مطابق فطرہ اور کفارہ ادا کریں۔

 
زکات فطرہ اور کفارہ کے کے تمام مسائل کو جاننے کے لئے مرجع عالیقدر حضرت آٰت اللہ العظمی صافی گلپایگانی مدظلہ الوارف کی توضیح المسائل کی طرف رجوع فرمائیں ۔

موضوع:

صفحات

Subscribe to RSS - اخبار دفتر و پایگاه